اسٹرابیری - ایک خوش ذائقہ پھل

امراض نسواں' امراض قلب و دیگر امراض میں مفید

0 581

اسڑابیری ایک خوبصورت مگر نازک پھل ہے۔ دیگر پھلوں کے بر عکس اس پھل کا گودا اند ر کی جانب اور بیج باہر کی طرف ہوتا ہے۔ شگفتہ سرخ رنگت اور سر پر سبزپتوں کا تاج لئے' دل کی شکل سے مشابہ اسٹرابیری گلاب کے خاندان سے تعلق رکھتی ہے اسے محبت کی علامت اور صحت کی ضمانت بھی کہا جاتا ہے چھ سو سے زائد اقسام کی اسٹابیریزپاکستان سمیت دنیا بھرمیں آئسکریم، ملک شیک ودیگرمشروبات، میٹھے پکوان اور سلاد کی جان ہے ۔

فروری سے جولائی کے دوران تازہ اسٹرابیریز کا بھرپور مزہ لیا جا سکتا ہے۔94فیصد امریکیوں کے ساتھ ساتھ اب پاکستان میں اس کی وافر کاشت کی وجہ سے پاکستانیوں کی بھی کثیر تعداد اسٹرابیری استعمال کررہی ہے۔
جدید طبی تحقیقات کے مطابق اسٹرابیری کا روزانہ استعمال انسانی جسم کی قوت مدافعت بڑھانے اور صحتمند رکھنے میں اہم کردار ادا کرتا ہے۔اس میں وٹامن سی کی وافر مقدار پائی جاتی ہے جس سے قوت مدافعت مضبوط ہوتی ہے۔اسٹرابیریز میں موجود مختلف وٹامنز، معدنیات اور زود ہضم ریشے جلد کی شادابی،خلیوں اور مدافعتی نظام کی بہتری کے ساتھ ساتھ دل اور کینسر کی صورت میں مرض کی شدت کم کرنے میں معاون ثابت ہوتی ہیں۔

اسٹرابیری میں موجود اینٹی آکسیڈینٹس(مانع تکسید اجزا) انسانی جسم میں پائے جانے والے فری ریڈیکلز(مجموعہ ایٹم) کو ختم کرتے ہیںنیز وٹامن سی 'فولیٹ اور مانع تکسید اجزاسرطان اور رسولی کے خلیات سے لڑنے کی صلاحیت رکھتے ہیںاسی وجہ سے اسٹرابیری کھانے والا کینسر جیسے مہلک مرض کا شکار نہیں ہوتا۔یاد رہے کہ فری ریڈیکلز جسم میں موجود کارآمد سیلز کو ختم کرتے ہیں اور کینسر کا سبب بنتے ہیں۔

اسٹرابیری عارضہ قلب کے مریضوں کے لیے انتہائی مفید پھل ہے اسٹرابیری میں دل کی شریانوں کووسیع کرنے کی صلاحیت پائی جاتی ہے۔اس کے استعمال سے دل کی بیماریوں کے خطرات میںکمی ہوجاتی ہے۔جو دل کی بیماریوں سے بچنا چاہتے ہیں،انھیں چاہیئے کہ وہ اسٹرابری استعمال کریں۔جدید تحقیقات کے مطابق اسٹرابیری ایک ایسا پھل ہے جس میں ایسے قدرتی اجزا پائے جاتے ہیں جو عارضہ قلب و دیگر امراض میں انتہائی مفید ہیں۔
اسٹرابیری میںفائبر( غذائی ریشہ)سیلی کون ،پوٹاشیم،میگنیشیم ،جست ، آئیو ڈین 'فولک ایسڈ، فلیوونائڈز،فائیٹو کیمیکلز'وٹامن بی ٢،بی٥،بی٦اورمیگنیزکی کافی مقدار پائی جاتی ہے۔اسٹرابیری جوڑوں کے درد اورگنٹھیا کے مرض میں فائدہ مند ہے۔ امراض چشم میں انتہائی مفید ہے 'بینائی کے نقائص'بصری اعصاب کی تقویت 'آنکھوں کی انفیکشن میںکارآمد ہے ۔اس میں بیس مختلف اجزااینٹی ایجنگ صلاحیت رکھتے ہیں جس کے باعث یہ جھریوںاور بڑھاپے سے بچا کر انسانی جسم کو جوان رکھتی ہے۔

اسٹرابیری میں موجود فائٹوکیمیکلزکولیسٹرول لیول کونارمل رکھتے ہیں جبکہ یہ پوٹاشیم اور میگنیشیم کی بدولت ہائی بلڈ پریشرمیں فائدہ مند ثابت ہوتی ہے۔اسٹرابیر ی کھانے سے قوت مدافعت بحال رہتی ہے جس کی وجہ سے نزلہ زکام سمیت بیشتر اقسام کی انفیکشینزسے بدن انسانی محفوظ رہتا ہے۔اسٹرابیری میں موجود فائٹونیوٹرنٹس 'سوجن یعنی ورم کو روکنے کی صلاحیت رکھتے ہیںاسٹرابیری میں ایک معدنی جز بورون پایا جاتا ہے جو خواتین کے جسم میں زنانہ ہارمونز کی سطح بڑھا دیتا ہے جس سے یہ بیشتر نسوانی امراض میں بھی فائدہ مند ہے اس میں موجودفلیونائڈزمزمن امراض 'سرطان،بلند فشار خون 'دانتوں کے امراض اور ہڈیوں کی کمزوری میںفائدہ مند ہیں۔اسٹرابیری کھانے سے پیاس کم لگتی ہے اسٹرابیری کا بیرونی استعمال رنگت میں نکھارکے علاوہ ایکنی وچھائیوں کودور کرکے چہرہ خوبصورت بناتاہے۔

سخت،چمکدار،گہری سرخ رنگت، درمیانہ سائز اور سر پر پتوں کا تاج تازہ اسٹرابیریز کی نشانیاں ہیں پیلے دھبوں، ہلکی سرخ یا سبزی مائل رنگت کی اسٹرابیریز خریدنا بہتر فیصلہ نہیں ۔ماہرین کے مطابق استعمال کے وقت ہی اسٹرابیریز کو دھونا چاہیے اسٹرابیریز کو ریفریجریٹر میں احتیاط سے رکھنا ضروری ہے اور دو دن سے زیادہ اسٹرابیریز کو رکھنا بھی نقصان دہ ہو سکتا ہے۔


احتیاط :گردے، پتے اور جگر کے پچیدہ امراض کی صورت میں اسٹرابیریز کھانے سے پرہیز کیا جائے۔
ناشتے میں دودھ اور شہد کے ساتھ بنایا گیا اسٹرابیریز کا جوس صحت کیلئے بہت زیادہ مفید ہوتا ہے سلاد اور دہی کے ساتھ بھی اسٹرابیریز کھائی جا سکتی ہیںجبکہ اس کے دیگر چند استعمالات نذر قارئین ہیں۔

سٹرا بیری کے مختلف استعمالات

جزا:
اسٹرابیریز آدھا کلو
چینی آدھا کلو
ترکیب:
اسٹرابیریز کو دھو کر اوپر سے تھوڑا کھرچ لیں۔پھر اسے چینی کے ساتھ رات بھر کے لیے فریج میں رکھ دیں۔اگلے روز اسٹرابیریز کو چولہے پر اتنا پکائیں کہ چینی گھل جائے اور گاڑھا شیرہ بن جائے۔اسٹرابیریز کو ثابت ہی رہنے دیں اور ٹھنڈا کر کے فریز کر لیں۔اسٹرابیری کو محفوظ کرنے کا یہ ایک بہترین طریقہ ہے۔

امراض نسواں' امراض قلب و دیگر امراض میں مفید
دہی ایک کپ
دودھ ایک کپ
اسٹرابیری 8عدد
چینی 3/4 کھانے کے چمچے
برف کٹی ہوئی1/4 کپ
ترکیب:
بلینڈر میں دہی اسٹرابیری دودھ چینی برف ڈال کر بلینڈ کرلیں۔ فریش اسٹرابیری سے گارنشنگ کرکے سرو کریں۔

جزا:
پسے ہوئے چاول چار کھانے کے چمچ
دودھ چار کپ
چینی چار کھانے کے چمچ
اسٹرابری آدھا کپ
پسی ہری الائچی آدھا چائے کا چمچ
بادام اور پستے دو کھانے کے چمچ
ترکیب:
پسے ہوئے چاولوں کو آدھے گھنٹے کے لیے بھگوئیں اور پھر انھیں تھوڑے پانی کے ساتھ گرائنڈ کر کے پیسٹ بنا لیں۔
اب چار کپ دودھ کو ابال کو اس میں چاولوں کا پیسٹ شامل کر کے پکائیں اور اس دوران چمچہ چلاتے رہیں۔
آمیزہ گاڑھا ہو جائے تو اس میں چار کھانے کے چمچ چینی ڈال کر پانچ منٹ مزید پکائیں اور چولہے سے اتار کر ٹھنڈا کر لیں۔

سٹرابیری نوش فرمانے کے استعمالات کے ساتھ ساتھ لگانے کابھی ایک نسخہ' چلتے چلتے بتاتا چلوں۔وہ خواتین جن کی رنگت سانولی ہو گئی ہو یا چہرے پر چھائیاں موجود ہوںوہ اپنے چہرے پر اسٹرابیری کا ماسک لگائیں تو ان کی رنگت نکھر جائے گی۔ایکنی میں بھی فائدہ مند ہے۔
اجزا:
اسٹرابیری تین عدد
جوکا آٹا ایک چھوٹا چمچ
شہد ایک چھوٹا چمچ
عرق گلاب دو بڑے چمچ
ترکیب:
پہلے اسٹرابری کو کچل لیںپھر اس میں جو کا آٹا'شہد اور عرق گلاب ملاکر آمیزہ بنائیں۔یہ آمیزہ پندرہ منٹ تک چہرے پر لگا رہنے دیںبعدازاں نیم گرم پانی سے چہرہ دھولیںیہ ماسک ہر تین دن بعد استعمال کیا جا سکتا ہے۔

"صدائے مسلم" تحاریر ای میل سروس
اس سہولت کو حاصل کرنے سے آپ کو تمام تحاریر ای میل پتہ پر موصول ہونگی