انسان کے ہاتھوں برپا ہونے والا ارتقأ، جہانِ حیرت

اس بات میں اب شک کی کچھ بھی گنجائش نہیں رہی کہ انسان نے ارتقأ کو مکمل طور پر اپنے ہاتھ میں لے لیا ہے۔ابھی سیلیکٹو بریڈنگ کی حیرانیاں کم نہ ہوئی تھیں کہ ٹرانس جینک ریسرچ نے حیاتیات کی دنیا میں ہنگامہ برپا کردیا۔ ٹرانس جینک ریسرچ نہایت سستی،…

کوانٹم فزکس کی تاریخ، زمان و مکان کی الیٰ غیرِ نہایت تقسیم کا راز

قدیم یونانی فلسفی زینو کے پیراڈاکسز مشہور ہیں۔زینو حرکت کا مُنکر ہے۔زینو کے نزدیک حرکت کا امکان نہیں کیونکہ ہمیں نقطہ اے سے نقطہ بی تک سفرکرنے کے لیے، پہلے اُن دونوں نقاط کا نصف فاصلہ طے کرنا ہوگا۔ اُن دونوں نقاط کا نصف فاصلہ طے کرنے کے لیے…

آئن سٹائن، تعارف اور حالاتِ زندگی

البرٹ آئن سٹائن، تاریخ ِ انسانی کا سب سے بڑا ماہرِ طبیعات جس نےبابائے فزکس نیوٹن کے پیچھے آنکھیں موند کر دوڑتےچلے جانے والے بڑے بڑے سائنسدانوں کو نہایت سادہ سادہ باتوں کے ذریعے چونکا دیا اور ایسی ایسی کراماتِ علمی کا مظاہرہ کیا کہ

اقبال کا تصوف

یہ جو ہم عموماً کہتے ہیں کہ اقبال نے عجمی تصوف کو اسلامی تصوف سے الگ کیا اور دونوں کی الگ الگ تشریحات پیش کرکے اوّل الذکر کو قوم اور فرد کے لیے یکساں قاتل اور ثانی الذکر کو حیات بخش قوت قرار دیا تو اس بات کا اصل مفہوم کیا ہے؟ ہم، جو عام…

تمہارے حسن کے جلوے بہم نہیں ہیں میاں !

تمہارے حسن کے جلوے بہم نہیں ہیں میاں ! نہیں ہیں، اب وہ تمہارے کرم نہیں ہیں میاں! رہے عدم کے مقابل نہیں مجالِ وجود ستم تو یہ ہے کہ "ہم ہیں، عدم نہیں ہیں‘‘ میاں ! یہ مانتے ہیں کہ قطرہ ہیں ایک پانی کا مگر وجود کے دریا میں ضم نہیں…

ہرلفظ ہے ابہام، نہ چِیدہ نہ چُنیدہ

ہرلفظ ہے ابہام، نہ چِیدہ نہ چُنیدہ کوئی نہیں پیغام، نہ چِیدہ نہ چُنیدہ جو ماہ ترے غم میں گزرجائے مبارک ہے صورتِ ایّام نہ چِیدہ نہ چُنیدہ گاہے یہ نہ گہنائے تو مرجائے قسم سے سُورج کی کوئی شام نہ چِیدہ نہ چُنیدہ بس ایک تری راہ کو تکنے…

میں جانتا ہوں حقیقت شناوری کیا ہے

میں جانتا ہوں حقیقت شناوری کیا ہے مگر بیاں کروں میری بساط ہی کیا ہے مرے عمل کا بھی خالق ہے تُو مرے مولا! یہ اختیار ہے میرا تو بے بسی کیا ہے جیے تو پی کے جیے ورنہ پھر جیے نہ جیے چلی ہے رسم تو یہ رسم پھر چلی کیا ہے میں اشکبارتھاڈُوبا…

مذہبِ سائنس کی شدت پسندانہ روش کا جائزہ

سائنس کو یہ وہم ہے کہ وہ فطرت کو سمجھتی ہے۔ فی زمانہ سائنس کی حیثیت کسی مضبوط مذہب کے جیسی ہے۔ کوئی مضبوط مذہب اپنے عہد میں یوں پہچانا جاسکتاہے کہ اُس کے ماننے والے کھلم کھلا اپنے عقائد کا اظہارکرسکیں اور باقی لوگ اُن سے فی الواقعہ مرعوب…

آئن سٹائن کا تصورِ زماں

آئن سٹائن کا تصور ِ زماں یہ ہے کہ ’’وقت‘‘ مکان کی بُعدِ رابع یعنی چوتھی ڈائمینشن ہے۔وقت ، مکان کی تین ابعاد میں سے ہرایک کےساتھ اس طرح جُڑا ہوا ہے جیسے کسی جولاہے نے اِن دھاگوں کی بُنائی کرکے ایک جال بنادیاہو۔ہم جانتے ہیں کہ مکان کے تین…